Sunday, 15 December 2013

چیف جسٹس آف پاکستان محترم تصدق حسین جیلانی نے پاکستان کے بدمعاش اور بلیک میلر میڈیا کیلئے کام کرنے سے واضح انکار کردیا


 چیف جسٹس آف پاکستان محترم تصدق حسین جیلانی  نے پاکستان کے بدمعاش اور بلیک میلر میڈیا کیلئے کام کرنے سے واضح انکار کردیا 
چیف جسٹس پاکستان جسٹس تصدق حسین جیلانی نے اپنے دور کے دوران خود اور سپریم کورٹ کو غیر ضروری میڈیا پبلسٹی  اور پاکستان کے بلیک میلر اور بدمعاش میڈیا سے زیادہ سے زیادہ دور رکھنے کی پالیسی اختیار کرلی ہے۔ ہفتہ کے روز چیف جسٹس پاکستان کا عہدہ سنبھالنے کے بعدپہلی مرتبہ سپریم کورٹ لاہور رجسٹری آمد کے موقع پر بھی ان کو دیئے جانے والے گارڈ آف آنر اور سلامی کی کوریج کرنے کی اجازت نہ تھی ، عین وقت پر چینلز کو اجازت دی گئی ۔مگر اس تقریب کو اتنی عجلت میں ختم کردیا گیا کہ چینلز کے کیمرہ مین صحیح طرح فوٹیج بھی نہ بنا سکے۔ بعد ازاں صحافیوں نے چیف جسٹس پاکستان سے ملاقات کی خواہش کا اظہار کیا  شاید وہ  صحافی چیف صاحب کے زریعے اپنے چینلز کی ریٹنگ بڑھانا چاہتے تھے یا سپریم کورٹ میں زیرالتواء ٹیکس سے متعلق کیسز میں مزید ریلیف چاہتے تھےمگر چیف جسٹس پاکستان نے سپریم کورٹ کے ڈپٹی رجسٹرار کو ہدایت کی کہ وہ صحافیوں کو باعزت طور پر چائے پلا کر ان سے ملاقات کے حوالہ سے معذرت کرلیں۔ ذرائع کے مطابق چیف جسٹس پاکستان نے میڈیا پرغیر ضروری پبلسٹی نہ کرنے کے حوالہ سے بھی بعض ہدایات جاری کی ہیں۔


Post a Comment